Jitnay Log Nazar Aatay HaiN Sab Kay Sab Beganay HaiN

جتنے لوگ نظر آتے ہیں سب کے سب بیگانے ہیں

جتنے لوگ نظر آتے ہیں سب کے سب بیگانے ہیں

اور وہی ہیں دور نظر سے جو جانے پہچانے ہیں

زنجیروں کا بوجھ لئے ہیں بے دیوار کے زنداں میں

پھر بھی کچھ آواز نہیں ہے کیسے یہ دیوانے ہیں

بچ بچ کر چلتے ہیں ہر دم شیشے کی دیواروں سے

کون کہے دیوانہ ان کو یہ تو سب فرزانے ہیں

خود ہی بجھا دیتے ہیں شمعیں روشنیوں سے گھبرا کر

اس محفل میں اے لوگو کچھ ایسے بھی پروانے ہیں

صیادوں نے گل چینوں نے گلشن کو تاراج کیا

لیکن ہم دیوانوں سے آباد ابھی ویرانے ہیں

ان کا غم ہے اپنا غم ہے اپنے پرائے سب کا غم

شہر وفا میں پھر بھی فرحتؔ اور کئی غم خانے ہیں

فرحت قادری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(694) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farhat Qadri, Jitnay Log Nazar Aatay HaiN Sab Kay Sab Beganay HaiN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 9 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farhat Qadri.