Aseer E Bazm HuN Khalwat Ki Justajoo MeiN HuN

اسیر بزم ہوں خلوت کی جستجو میں ہوں

اسیر بزم ہوں خلوت کی جستجو میں ہوں

میں اپنے آپ سے ملنے کی آرزو میں ہوں

مری سرشت میں رنگ بہار ہے لیکن

بہت دنوں سے کسی باغ بے نمو میں ہوں

تو مجھ کو بھول گیا ہے مگر مرے مطرب

میں درد بن کے ترے نغمۂ‌‌ گلو میں ہوں

خزاں رسیدہ کسی نخل نیم جاں کے تلے

مجھے بھی دیکھ اسی شام زرد رو میں ہوں

بھٹکتا رہتا ہوں شام و سحر نہیں معلوم

میں کسی تلاش میں ہوں کس کی جستجو میں ہوں

وہ جس کے طرز مسیحائی پر ہے شہر نثار

اسی کی تیغ سے ڈوبا ہوا لہو میں ہوں

میں ایک آتش خواب آفریدہ کی صورت

کبھی چراغ کی لو میں کبھی سبو میں ہوں

تو میرے لفظوں سے باہر مجھے تلاش نہ کر

چھپا ہوا میں کہیں اپنی گفتگو میں ہوں

پکارتا ہوں مدد کو کوئی نہیں آتا

ستم کی شام ہے اور نرغۂ عدو میں ہوں

فراست رضوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1540) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Frasat Rizvi, Aseer E Bazm HuN Khalwat Ki Justajoo MeiN HuN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Frasat Rizvi.