Zuban K Sath Yahan Zaiqa Bhi Rakha Hai

زباں کے ساتھ یہاں ذائقہ بھی رکھا ہے

زباں کے ساتھ یہاں ذائقہ بھی رکھا ہے

تمہارا ذکر تمہارا پتا بھی رکھا ہے

سجا کے دھوپ کڑی آج گھر سے نکلے ہیں

کسی کے سائے کو زیر قبا بھی رکھا ہے

دھمال کے لیے کیا کم زمین پڑتی ہے

جو آسمان کو سر پر اٹھا بھی رکھا ہے

کسی طرح سے بھی رونق بڑھے مرے گھر کی

بجھا ہوا ہی سہی اک دیا بھی رکھا ہے

مرا شعار خیانت نہیں امانت ہے

ملا ہے زخم جو اس کو ہرا بھی رکھا ہے

صدائے دل زدگاں آئے اس طرف شاید

دریچہ ایک مکاں کا کھلا بھی رکھا ہے

ہمدم کاشمیری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(433) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hamdam Kashmiri, Zuban K Sath Yahan Zaiqa Bhi Rakha Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hamdam Kashmiri.