Sookh Chuke Hain Ashk Bhi Ap Ke Intezar Mein

سوکھ چکے ہیں اشک بھی آپ کے انتظار میں

سوکھ چکے ہیں اشک بھی آپ کے انتظار میں

خاک سی اڑ رہی ہے اب دیدہ اشکبار میں!

ہائے یہ کیسا گل کھلا گلشنِ روزگار میں

لٹ گیا میرا آشیاں وہ بھی بھری بہار میں

ان کی روش الگ رہی طرزِ جہاں بھی چھوڑئے

اور کسی کا ذکر کیا، دل نہیں اختیار میں

ہائے وہ ذوقِ بندگی ہائے وہ دورِ زندگی

جب تھی جوانِ بیخودی کیف تھا خار زار میں

تم جو ہو دے کے مات خوش مجھ کو یہ مات ہے قبول

یہ کوئی ہار بھی ہُوئی جیت ہے ایسی ہار میں

تم نے جو آنکھیں پھیر لیں سارا زمانہ پھر گیا

"میرا کوئی نہیں رہا اتنے بڑے دیار میں"

اصل وفا و بندگی عالم زار ہے یہی

لطف ہے اعتماد میں بات ہے اعتبار میں

سید عالم واسطی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(465) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Alam Wasti, Sookh Chuke Hain Ashk Bhi Ap Ke Intezar Mein in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Alam Wasti.