–apne Veraney Ka Nuqsaan Nahi Chahta Main

اپنے ویرانے کا نقصان نہیں چاہتا میں

اپنے ویرانے کا نقصان نہیں چاہتا میں

یعنی اب دوسرا انسان نہیں چاہتا میں

کٹ گئی جیسی بھی کٹنی تھی یہاں دھوپ کے ساتھ

اب کسی سائے کا احسان نہیں چاہتا میں

مر رہا ہوں میں یہاں اور وہ کہتا ہے مجھے

نا مکمل ترا ایمان نہیں چاہتا میں

پاس آ کر نہ بڑھا اور پریشانئ دل

پھر کسی عشق کا سامان نہیں چاہتا میں

تو محبت میں یوں ہی جان گنوا بیٹھے گا

جا چلا جا کہ تری جان نہیں چاہتا میں

چاہتا ہوں کہ یہاں پھول کھلے ہوں ہر سو

یعنی یہ جنگ کا میدان نہیں چاہتا میں

میں جو چپ ہوں تو اسے آپ غنیمت جانیں

دیکھیے شہر میں طوفان نہیں چاہتا میں

اظہر عباس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(756) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Azhar Abbas, –apne Veraney Ka Nuqsaan Nahi Chahta Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Azhar Abbas.