Bass Ik Issi Pey Tu Poori Tarhaan Ayyan Hoon Main

بس اک اسی پہ تو پوری طرح عیاں ہوں میں

بس اک اسی پہ تو پوری طرح عیاں ہوں میں

وہ کہہ رہا ہے مجھے رائگاں، تو ہاں! ہوں میں!

جسے دکھائی دوں، میری طرف اشارہ کرے

مجھے دکھائی نہیں دے رہا کہاں ہوں میں

میں خود کو تجھ سے مٹاؤں گا احتیاط کے ساتھ

تو بس نشان لگا دے، جہاں جہاں ہوں میں

کسی نے پوچھا کہ تم کون ہو؟ تو بھول گیا

ابھی کسی نے بتایا تو تھا، فلاں ہوں میں

ہر ایک شخص کو اپنی پڑی ہوئی ہے یہاں

مرا خیال ہے اپنوں کے درمیاں ہوں میں

میں کس سے پوچھوں یہ رستہ درست ہے کہ غلط؟

جہاں سے کوئی گزرتا نہیں، وہاں ہوں میں

ادھر ادھر سے نمی کا رساؤ رہتا ہے

سڑک سے نیچے بنایا گیا مکاں ہوں میں

جبیں پہ ہجر کی تحریر درج کرنے میں

کسی پرانے قلم کی طرح رواں ہوں میں

عمیر نجمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(8051) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Umair Najmi, Bass Ik Issi Pey Tu Poori Tarhaan Ayyan Hoon Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a , and the type of this Nazam is Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Umair Najmi.