Kamaal Likhta Hoon

کمال لکھتا ہوں

واقف ہوں یار کی سبھی اداؤں سے

حُسن پڑھتا ہوں، جمال لکھتا ہوں

بیزار ہوں موت و حیات کی رنجشوں سے

امن چاہتا ہوں، قتال لکھتا ہوں

دنیا کی خصلت بھی ہے عیاں مجھ پر

حرام چبھتا ہے، حلال لکھتا ہوں

جواب کی اُمید تو نہیں مگر پھر بھی

سوال کرتا ہوں، سوال لکھتا ہوں

لوگ تو پڑھتے ہیں تحریریں فقط

آنسو پیتا ہوں، خیال لکھتا ہوں

لفظوں کا ذخیرہ چاہے نہیں پاس میرے

پارسؔ جب میں لکھوں، کمال لکھتا ہوں

پارس سہیل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(774) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Paaris Sohail, Kamaal Likhta Hoon in Urdu. Also there are 5 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Paaris Sohail.