MENU Open Sub Menu

Humra To Yahe Anjam Hona Tha

ہمارا تو یہی انجام ہونا تھا

ہمارا تو یہی انجام ہونا تھا
ہنستی ھوئ آنکھوں کو
تقدیر نے رولانا تھا
وقت نے ایسی چال چلی تھی
جہاں اپنا بھی بیگانہ تھا
عجب ھے یہاں زندگی
جہاں مصائب کاشکار ہر گھرانہ تھا
کیئ رحمت کے نام پر بیٹیاں تھی
کئ بیٹیوں کے نام پر اذیتیں
کئ بیٹیاں عصمتوں کی چادر اتار گئ
کئ عصمتوں کے آگے ہار کر
بےنام محبت ہار گئ
وہ کلیاں کتنی پیاری تھی
جو جان اپنی وار گئ
کچھ خاموش تماشائ بن گۓ
کسی کے لب سب کچھ بول گۓ
کسی تہہ خانے کی نظر ہوۓ
وہ خواب جو سارے دیکھے تھے
کسی قبرستان میں کئ بےنام قبریں تھی
کئ کنویں میں پڑی لاشیں تھی
وہ آہ بھی کیسی آہ تھی
جو عرش تک ہلا گی

ثروت انمول

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(192) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Sarwat Anmol, Humra To Yahe Anjam Hona Tha in Urdu. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sarwat Anmol.