Shaeri Ko Mera Salam Hai Ab

شاعری کو میرا سلام ہے اب

یہ میرا آخری کلام ہے اب

شاعری کو میرا سلام ہے اب

غالب و میر کا ہے نام بڑا

میں نے حالی، فراز کو بھی پڑھا

میں نے حسرت کو حسرتاً دیکھا

اُس کے شعروں میں بانکپن دیکھا

میں نے اِقبال کو بھی دیکھا ہے

درد کے حال کو بھی دیکھا ہے

میں نے محسن کی بھی کِتاب پڑھی

شاعری ساری بے حساب پڑھی

آتشِ عشق نے آتش کو جلایا ھوا تھا

عشق فرہاد کے دِل میں سمایا ھوا تھا

قیس صحرا میں پِھرا اور بڑا نام کِیا

عشق میں چند ہی افراد نے یہ کام کِیا

شعر مومن کے بھی ناصر کے بھی اچھے ہیں بہت

جالب و جون بھی الفاظ کے سچے ہیں بہت

میں ہوں تنہائی ہے شام ہے اب

شعر لِکھے ہیں تو آرام ہے اب

شاعری کو میرا سلام ہے اب

محمدعاصم نقوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(714) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Syed Muhammad Asim Naqvi, Shaeri Ko Mera Salam Hai Ab in Urdu. Also there are 6 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Muhammad Asim Naqvi.