Jabeen Sang Pay Likha Mra Fasana Gaya

جبین سنگ پہ لکھا مرا فسانہ گیا

جبین سنگ پہ لکھا مرا فسانہ گیا

میں رہ گزر تھا مجھے روند کر زمانہ گیا

نقاب اوڑھ کے آئے تھے رات کے قزاق

پگھلتی شام سے سب دھوپ کا خزانہ گیا

کسے خبر وہ روانہ بھی ہو سکا کہ نہیں

تمہارے شہر سے جب اس کا آب و دانہ گیا

وہ چل دیا تو نگاہوں سے کہ دلوں سے غرور

لبوں سے زہر ہواؤں سے تازیانہ گیا

یہ جانتا ہوں کہ تو نے لیا تھا روک اسے

مگر وہ آتشیں آنسو مجھے جلا نہ گیا

میں ایک ڈولتا ساگر مجھے اٹھاتا کون

گھٹا اٹھا کے چلی تھی مگر چلا نہ گیا

کہاں گیا میں بچھڑ کر کسے خبر ہوگی

جو ایک بار یہاں سے ہوا روانہ گیا

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(881) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Jabeen Sang Pay Likha Mra Fasana Gaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.