Haal Dil Bad Se Badtar Hua Dekhiye

حال دل بد سے بد تر ہوا دیکھیے

حال دل بد سے بد تر ہوا دیکھیے

آپ کا کام ہے دیکھنا دیکھیے

وہ جو رکھا ہوا ہے جہاں کے لئے

آپ خود بھی تو وہ آئنہ دیکھیے

عقل والوں کی امداد کے واسطے

جاں بکف ہے کوئی سر پھرا دیکھیے

شہر جل بجھ گیا لوگ مر کب گئے

صبح نو کل نیا حادثہ دیکھیے

اس تماشائے اہل سیاست کو آپ

دیکھ سکتے ہیں بس بارہا دیکھیے

اپنے اوسان کھوتی زمیں ہی نہیں

آسماں کو بھی مرتا ہوا دیکھیے

ایک حالت ہے دل کی کچھ ایسی بھی جب

خود کو ممکن ہے خود سے جدا دیکھیے

جلوہ فرما ہے جو اپنے اندر اسے

دم بہ دم دیکھیے جا بہ جا دیکھیے

ایک دوجے سے اکتا گئے آدمی

ان سے اکتائے گا کب خدا دیکھیے

شدت غم ہے میں بھی ہوں پیاسا امرؔ

آس پاس اب کوئی میکدہ دیکھیے

امردیپ سنگھ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(425) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Amardeep Singh, Haal Dil Bad Se Badtar Hua Dekhiye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Amardeep Singh.