Yeh Kisi Shakhs Ko Khonay Ki Talaafi Thehra

یہ کسی شخص کو کھونے کی تلافی ٹھہرا

یہ کسی شخص کو کھونے کی تلافی ٹھہرا

میرا ہونا مرے ہونے میں اضافی ٹھہرا

جرم آدم تری پاداش تھی دنیا ساری

آخرش ہر کوئی حق دار معافی ٹھہرا

یہ ہے تفصیل کہ یک لمحۂ حیرت تھا کوئی

مختصر یہ کہ مری عمر کو کافی ٹھہرا

کچھ عیاں ہو نہ سکا تھا تری آنکھوں جیسا

وہ بدن ہو کے برہنہ بھی غلافی ٹھہرا

جب زمیں گھوم رہی ہو تو ٹھہرنا کیسا

کوئی ٹھہرا تو ٹھہرنے کے منافی ٹھہرا

قافیہ ملتے گئے عمر غزل ہوتی گئی

اور چہرہ ترا بنیاد قوافی ٹھہرا

امیر امام

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(381) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ameer Imam, Yeh Kisi Shakhs Ko Khonay Ki Talaafi Thehra in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ameer Imam.