Tu Jism Hai Tu Mujh Se Lipat Kar Kalam Kar

تو جسم ہے تو مجھ سے لپٹ کر کلام کر

تو جسم ہے تو مجھ سے لپٹ کر کلام کر

خوشبو ہے گر تو دل میں سمٹ کر کلام کر

میں اجنبی نہیں ہوں مجھے روند کر نہ جا

نظریں ملا کے دیکھ پلٹ کر کلام کر

بالائے بام آنے کا گر حوصلہ نہیں

پلکوں کی چلمنوں میں سمٹ کر کلام کر

قوس قزح کے رنگ میسر نہیں تو پھر

دریا کی موج موج میں بٹ کر کلام کر

جنت میں یا تو مجھ کو پرانا مقام دے

یا آ مری زمیں میں پلٹ کر کلام کر

انور سدیدؔ عام سا بندہ ہے اس کے ساتھ

مٹی پہ بیٹھ گرد میں اٹ کر کلام کر

انور سدید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(467) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Sadeed, Tu Jism Hai Tu Mujh Se Lipat Kar Kalam Kar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Sadeed.