Marnay Walay Ke Kamray Mein

مرنے والے کے کمرے میں

یوں رگ و پے میں اجل اتری ہے

ہاتھ ساکت ہیں دعا کیا مانگیں

آنکھ خاموش ہے، کیا دیکھے گی

ہونٹ خوابیدہ ہیں کیا بولیں گے

ایک سناٹا ابد تا بہ ابد

جہد یک عمر کا حاصل ٹھہرے

درد کا شعلہ رگ جاں کا لہو

جنس بے مایہ تھے بے مایہ رہے

تیرہ خاک ان کی خریدار بنے

نکہت گل کی طرح آوارہ

بوئے جاں، وسعت آفاق میں گم

یک کف خاک ہے وہ بھی کب تک؟

صبح کی اوس سے آنکھیں دھو لو

کمرے سے جھانک کے باہر دیکھو

ایسے مصروف تگ و تاز ہیں سب

جیسے کل ان کے مقدر میں نہیں

ایاز محمود ایاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(602) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ayaz Mahmood Ayaz, Marnay Walay Ke Kamray Mein in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ayaz Mahmood Ayaz.