Dekha Tujhe To Aankhon Ne Aywan Saja Liye

دیکھا تجھے تو آنکھوں نے ایواں سجا لیے

دیکھا تجھے تو آنکھوں نے ایواں سجا لیے

جیسے تمام کھوئے ہوئے خواب پا لیے

جتنے تھے تیرے مہکے ہوئے آنچلوں کے رنگ

سب تتلیوں نے اور دھنک نے اڑا لیے

ایسی گھٹی فضاؤں میں کیسے جئیں گے وہ

کچھ قافلے جو آئے ہیں تازہ ہوا لیے

ان سر پھری ہواؤں سے کچھ آشنا تو ہوں

گہرے سمندروں میں نہ کشتی کو ڈالیے

اظہار کیجیے کہ ذرا کرب کم تو ہو

اے دوستو دکھوں کو دلوں میں نہ پالیے

خود ہی اٹھائیں اپنے جنوں کی جراحتیں

یہ روگ دوسروں کے نہ کھاتے میں ڈالیے

پہلے یہ کوہسار تو تسخیر کیجیے

فارغؔ ابھی فلک پہ کمندیں نہ ڈالیے

فارغ بخاری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(906) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farigh Bukhari, Dekha Tujhe To Aankhon Ne Aywan Saja Liye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farigh Bukhari.