Kharch Jab Ho Gai JazboN Ki Raqam Aap Hi Aap

خرچ جب ہو گئی جذبوں کی رقم آپ ہی آپ

خرچ جب ہو گئی جذبوں کی رقم آپ ہی آپ

کھل گیا ہم پہ حسینوں کا بھرم آپ ہی آپ

اب کے روٹھے تو منانے نہیں آیا کوئی

بات بڑھ جائے تو ہو جاتی ہے کم آپ ہی آپ

روز بڑھتا تھا کوئی دست طلب اپنی طرف

سر سے ہوتا ہوگا اک بوجھ بھی کم آپ ہی آپ

ان کے وعدوں پہ کوئی دن تو گزارہ کیجے

آپ بن جائیں گے تصویر الم آپ ہی آپ

جیسے بجھتا ہے کوئی پھول شرارہ بن کر

حسن کی آنچ بھی ہو جائے گی کم آپ ہی آپ

آبگینوں کی طرح ٹوٹ گیا ٹوٹ گیا

خواب یوسف میں زلیخا کا بھرم آپ ہی آپ

شاخ تنہائی سے پھل توڑیں گے چپکے چپکے

عشق کے یہ بھی مزے لوٹیں گے ہم آپ ہی آپ

دیر تک چھائی رہی ایک اداسی دل پر

جانے کیا سوچ کے پھر ہنس دیے ہم آپ ہی آپ

میں کہاں آیا ہوں لائے ہیں تری محفل میں

مری وحشت مرے مجبور قدم آپ ہی آپ

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(538) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Kharch Jab Ho Gai JazboN Ki Raqam Aap Hi Aap in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.