Swad Shehar Se Aghmaz Karna Chahta Hon

سواد شہر سے اغماض کرنا چاہتا ہوں

سواد شہر سے اغماض کرنا چاہتا ہوں

کہ میں اپنا سفر آغاز کرنا چاہتا ہوں

خجل ہوں گا متاع عشق پر شاید کسی دن

ابھی اس فیصلے پر ناز کرنا چاہتا ہوں

رگ جاں سے بھی جو نزدیک آتا جا رہا ہے

میں کیا سچ مچ اسے ہم راز کرنا چاہتا ہوں

الٹنا چاہتا ہوں آج ماضی کے ورق میں

کہ فردا کا دریچہ باز کرنا چاہتا ہوں

کسی کے سامنے رکھے ہوئے اک آئنے کو

میں اپنی روح کا غماز کرنا چاہتا ہوں

پرندوں کو ذرا سی دیر چپ رہنے کا کہہ کر

ہوا کو زمزمہ پرداز کرنا چاہتا ہوں

منانا چاہتا ہوں روٹھنے والوں کو ساجدؔ

مگر اک شخص کو ناراض کرنا چاہتا ہوں

غلام حسین ساجد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(404) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hussain Sajid, Swad Shehar Se Aghmaz Karna Chahta Hon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 88 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hussain Sajid.