Ghar Ke Zandan Se Usay Fursat Miley To Aaye Bhi

گھر کے زنداں سے اسے فرصت ملے تو آئے بھی

گھر کے زنداں سے اسے فرصت ملے تو آئے بھی

جاں فزا باتوں سے آ کے میرا دل بہلائے بھی

لگ کے زنداں کی سلاخوں سے مجھے وہ دیکھ لے

کوئی یہ پیغام میرا اس تلک پہنچائے بھی

ایک چہرے کو ترستی ہیں نگاہیں صبح و شام

ضو فشاں خورشید بھی ہے چاندنی کے سائے بھی

سسکیاں لیتی ہوائیں پھر رہی ہیں دیر سے

آنسوؤں کی رت مرے اب گلستاں سے جائے بھی

روز ہنستا ہے صلیبوں سے ادھر ماہ منیر

اس کے پیچھے کون ہے وہ چھب مجھے دکھلائے بھی

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2943) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Ghar Ke Zandan Se Usay Fursat Miley To Aaye Bhi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.