Hijar Ki Manzil Hamein Ab Ke Pasand Aayi Nahi

ہجر کی منزل ہمیں اب کے پسند آئی نہیں

ہجر کی منزل ہمیں اب کے پسند آئی نہیں

ہم اکیلے ہیں مگر ہم راہ تنہائی نہیں

ایک دن چھن جائے گا آنکھوں سے سارا رنگ و نور

دیکھ لو ان کو کہ یہ منظر ہمیشائی نہیں

اک جنوں کے واسطے بستی کو وسعت دی گئی

ایک وحشت کے لیے صحرا میں پہنائی نہیں

کون سے منظر کی تابانی اندھیرا کر گئی

ایسا کیا دیکھا کہ اب آنکھوں میں بینائی نہیں

جب کبھی فرصت ملے گی دیکھ لیں گے سارے خواب

خواب بھی اپنے ہیں یہ راتیں بھی ہرجائی نہیں

مہتاب حیدر نقوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(206) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mahtab Haider Naqvi, Hijar Ki Manzil Hamein Ab Ke Pasand Aayi Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mahtab Haider Naqvi.