Gham O Nishat Ki Har Reh Guzar Mein Tanha Hon

غم و نشاط کی ہر رہ گزر میں تنہا ہوں

غم و نشاط کی ہر رہ گزر میں تنہا ہوں

مجھے خبر ہے میں اپنے سفر میں تنہا ہوں

مجھی پہ سنگ ملامت کی بارشیں ہوں گی

کہ اس دیار میں شوریدہ سر میں تنہا ہوں

ترے خیال کے جگنو بھی ساتھ چھوڑ گئے

اداس رات کے سونے کھنڈر میں تنہا ہوں

گراں نہیں ہے کسی پر یہ رات میرے سوا

کہ مبتلا میں امید سحر میں تنہا ہوں

نہ چھوڑ ساتھ مرا ان اکیلی راہوں میں

دل خراب ترا ہم سفر میں تنہا ہوں

وہ بے نیاز کہ دیکھی ہو جیسے اک دنیا

مجھے یہ ناز میں اس کی نظر میں تنہا ہوں

مجھی سے کیوں ہے خفا میرا آئینہ مخمورؔ

اس اندھے شہر میں کیا خود نگر میں تنہا ہوں

مخمور سعیدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(632) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Makhmoor Saeedi, Gham O Nishat Ki Har Reh Guzar Mein Tanha Hon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Makhmoor Saeedi.