Sagar Dewta

ساگر دیوتا

کہو تم کہاں ہو؟

مرکب صداؤں کے ریلے میں

کس کو پکاروں؟

عجب نم زدہ سلوٹوں میں گھری زندگی ہے

زمیں ایک آبی عمل سے گزر کر

مدور ہوئی ہے

چٹانوں کے نیچے بھی، اندر بھی

خوابیدہ بل دار آبی چٹانیں

شبِ ارتقا کی عجب داستانیں

بدن کی پہاڑی میں خفتہ

نمک اور چونے کی کانیں

نمی چاٹتے ریگزاروں کی سوکھی زبانیں

سیہ سنگِ آہن ربا اور سنگِ ستارہ

جزیرے، ڈھلانیں

حجر اور جل کھور مٹی کے تودے

خراطین، پھل، پھول، پودے

پتاور، سماروغ، تالوس

جل ناگ، سیلا

شکن دار اصداف، سرطان، کچھوے

سمک اور بگلے ۔۔۔۔۔۔۔

مگر تم کہاں ہو؟

تمہیں ڈھونڈتے ہیں مِرے خواب کب سے

میں صدیوں کے ساحل پہ تنہا

تمہارے جنم روپ، ساروپ کا منتظر ہوں

مجھے پھر سے وہ زندگی دو

جسے میں نے اپنے بدن سے جدا کر دیا تھا

زمینوں، زمانوں کی خواہش سے آگے

فقط ایک آبی ردا کر دیا تھا ۔۔۔۔۔۔ !!

نصیر احمد ناصر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(309) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Naseer Ahmed Nasir, Sagar Dewta in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Naseer Ahmed Nasir.