Bujha Bhi Ho To Ujala Meri Nazar Mein Rahay

بجھا بھی ہو تو اجالا مری نظر میں رہے

بجھا بھی ہو تو اجالا مری نظر میں رہے

کوئی چراغ تو ایسا بھی میرے گھر میں رہے

بنا بنا کے بگاڑا گیا ہمیں اکثر

مثال کوزہ کسی دست کوزہ گر میں رہے

حصار عشق سے باہر نکل سکے نہ کبھی

کہ ہم بچھڑ کے بھی تجھ سے ترے اثر میں رہے

رہ سفر میں سر شام ہم ٹھہر تو گئے

مگر کچھ ایسے کہ جیسے کوئی سفر میں رہے

فراق یار ہی تقدیر ہو تو کیا کیجے

وصال یار کا سودا ہزار سر میں رہے

نگاہ خوب سہی دوسروں کے عیبوں پر

مگر خود اپنا گریبان بھی نظر میں رہے

نہ ہو خوشی کا گماں ایسے غم پہ کیوں خاورؔ

جو غم خوشی کی طرح قلب معتبر میں رہے

رحمان خاور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1195) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rahman Khawar, Bujha Bhi Ho To Ujala Meri Nazar Mein Rahay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rahman Khawar.