Barsoon Baad Aaj Sulag Uthi Hai Ishq Ki Chingari

برسوں بعد آ ج سلگ اٹھی ہے عشق کی چنگاری

برسوں بعد آ ج سلگ اٹھی ہے عشق کی چنگاری

مرے دل کے خاکستر میں عمر ہے اس نے گزاری

یہ نہ مکان خستہ دیکھے نہ قصر عالی دیکھے

اب نہ فیض د ے گی تجھے تری یہ گریہ و زاری

تُو کیا جانے یہ کس د ل سے نکل کر کس دل میں جابسے

رفتار برق سے تیز ہوتی ہے اس کی سواری

ہنگامہٴ فراق سے میں ہی نہیں چمن بھی اجڑ گیا

اپنا ہمنشیں کھو بیٹھی ہے اس ہنگامے میں بلبل بیچاری

میرے ہی چمن میں پیدا کر لے تو اپنا کوئی سیہم

نہ خوش ہو تو دیکھ کر ان کلیوں کی حسین اداکاری

مری نصیحت کا بھرم رکھے یا نہ رکھے تو لیکن

مجھے تو ذرا بھی مقصود نہیں ہے تری دل آزاری

نہ دل دکھا تو ا پنا نہ اشک بہا اپنے

ایسے ہنگاموں میں ہے نہیں یہ طریق غمگساری

تو مرا غم ہجر نہ دیکھ مری تنہائی نہ دیکھ

مجھے چھو ڑ تو لازم ہے اس میں تری رضا کاری

نہ تجھے احساس وفا ،نہ مجھے احساس جفا کا غم

کہیں مٹ نہ جائے مرے دل سے احساس خطاکاری

جس دل پہ غم فراق کا بسیراتھا اسی پہ تیر بھی تیرا تھا

کیا ترے سینے میں بھی دل نہیں ہے اے شکاری

کبھی تو بھی تھا اپنی محفل میں سب کا شاہکار

آ ج ترے کچھ کام نہ آ سکی تری وہ شاہکاری

تجھے مرا دکھ بھی نظر نہ آیا ، مرا غم بھی نظر نہ آیا

مرے کسی کا م نہ آ سکی آخر تری آئینہ داری !

سردار زبیر احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(407) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sardar Zubair Ahmed, Barsoon Baad Aaj Sulag Uthi Hai Ishq Ki Chingari in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sardar Zubair Ahmed.