Koh E Khadshaat Sir Howa Hi Nahi

کوہِ خدشات سر ہوا ہی نہیں

کوہِ خدشات سر ہوا ہی نہیں

پار کیا ہے، میں جانتا ہی نہیں

میں رکا تھا تو وقت رک جاتا

لاکھ روکا مگر رکا ہی نہیں

کتنے ارماں سے کھٹکھٹایا تھا

ہائے افسوس! در کھلا ہی نہیں

اب کوئی چوٹ لگ بھی جائے تو کیا

دل میں اب زخم کی جگہ ہی نہیں

ایک لمحہ، جسے میں ہار چکا

کیسے کہہ دُوں وہ میرا تھا ہی نہیں

جانے کیا کھو گیا تھا راہوں میں

آج تک جو مجھے ملا ہی نہیں

لذّتیں درد میں چھپی ہیں عبید

راحتوں میں کوئی مزہ ہی نہیں

عبیدالرحمٰن نیازی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(810) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ubaid Ur Rehman Niazi, Koh E Khadshaat Sir Howa Hi Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ubaid Ur Rehman Niazi.