Thaka Hara Be Jaan Badal Ka Tokra

تھکا ہارا بے جان بادل کا ٹکڑا

تھکا ہارا بے جان بادل کا ٹکڑا

درختوں چٹانوں سے دامن بچاتا

پہاڑی کے کوہان سے نیچے اترا

بہت تھک چکا تھا

ہزاروں برس کی مسافت

ہزاروں برس تک بس اک دھن مسلط

بڑھے آگے بڑھ کر

پہاڑوں درختوں نکیلی چٹانوں

ہوا کی نہتی سسکتی ہوئی

کرب میں ڈوبی چیخوں کو

مٹھی میں لے کر مسل کر

بڑی سادگی سے ہنسے مسکرائے

وہ دھن اب کہاں ہے

وہ ننھی سی معصوم سی مسکراہٹ

خمیدہ لبوں سے پھسل کر

حسیں اوس کے شوخ قطرے کے مانند

اب خاک پر گر چکی ہے

تھکا ہارا بے جان بادل کا ٹکڑا

درختوں چٹانوں سے دامن بچاتا

پہاڑی کے کوہان سے دم بہ دم

گہرے پر ہول کھڈ میں اگر جا رہا ہے

تو کیا ہے

یہ بادل کا ٹکڑا بہت تھک چکا ہے

بہت تھک چکا ہے

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(488) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Thaka Hara Be Jaan Badal Ka Tokra in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.