بند کریں
ادب مضامین

مزید عنوان

اردو ادب میں نیا اضافہ

کمال فن اور شیخی

علم نحو میں کامل ایک عالم کہیں سفر پر جا رہا تھا
راستے میں دریا آیا ایک کشتی پر سوار ہوا از راہ خود پرستی اور شیخی میں ملاح سے پوچھا:

"حکایات" میں شائع کیا گیا

عبرت حاصل کرنا

ایک مولوی صاحب نے لوگوں کو ڈرانے اور عبرت حاصل کرنے کے لئے ہر جمعہ پر دوزخ کے متعلق تقریریں کرنا شروع کر دیں۔ اُن کا اندازِ بیاں ایسا نرالہ اور شیریں تھا کہ بعض لوگوں کی

"حکایات" میں شائع کیا گیا

صحرا اور پانی

ایک صحرا میں ایک عبادت گزار عابد قیام پذیر تھا۔ کچھ حاجی وہاں سے گزرے تو اسے گرم ریت پر عبادت میں مصروف دیکھ کر حیران رہ گئے کہ

"حکایات" میں شائع کیا گیا

خواب سَرا کا آدمی

نوے (۹۰) کی دہائی کئی حوالوں سے بیسویں صدی کی اہم ترین اور عظیم ترین دہائی قرار پاتی ہے۔ اس عشرے میں کئی اہم عالم گیر تبدیلیاں رونما ہوئیں جنھوں نے نہ صرف یہ کہ دنیا کی سیاسیات و سماجیات، معاشیات و اقتصادیات،نفسیات و بشریات، خیالات و نظریات، سائنس اور ٹیکنالوجی، علوم و فنون، اور شعریات و ادبیات وغیرھم کو ایک نیا رخ دیا بلکہ ان رجحانات کی بنیاد بھی رکھ دی، جنھوں نے آگے چل کر اکیسویں صدی کے اوائل میں ایک نئے عالمی منظر نامے کے خدوخال کو متعین کرنا تھا۔

"مضمون" میں شائع کیا گیا

مفت مشورہ

ایک شخص مدتوں کا بیمار زندگی سے لاچار و بیزار طبیب کے پاس گیا اور کہنے لگا جناب مجھے کوئی دوا دیں تاکہ صحت پائوں اور آپ کی جان و مال کو دعائیں دوں۔ طبیب نے نبض پر انگلیاں رکھیں

"حکایات" میں شائع کیا گیا

صبر کا امتحان

ایک عورت کو اللّٰہ ہر بار اولادِ نرینہ سے نوازتا مگر چند ماہ بعد وہ بچہ فوت ہو جاتا۔ لیکن وہ عورت ہر بار صبر کرتی اور اللّٰہ کی حکمت سے راضی رہتی تھی۔ مگر اُس کے صبر کا امتحان طویل ہوتا گیا اور

"حکایات" میں شائع کیا گیا

بندہ پروری

ایک غریب مفلس قلاش شخص جو بھوکہ اور ننگا تھا,ان کو دیکھ کر لوگوں سے پوچھنے لگا یہ ریئس زادے کون ہیں ؟ جواب دینے والے نے کہا :"یہ ہمارے علاقے کے نواب کے نوکر چاکر ہیں".وہ یہ سن کر حیران رہ گیا

"حکایات" میں شائع کیا گیا

جادوگرنی

ایک دور اندیش بادشاہ اپنے حسن صورت اور نیک سیرت سے آراستہ بیٹے کا رشتہ کسی ذاہد و پرہیزگار صالح خاندان میں کرنا چاہتا تھا۔ بادشاہ نے جب یہ بات شہزادے کی ماں سے کی تو اس نے بادشاہ سے کہا کہ

"حکایات" میں شائع کیا گیا

عشق مجازی

ظاہری رنگ روپ کو دیکھ کر نفسانی عشق پالنا ایک غلاظت کے سوا اور کچھ بھی نہیں جو آدمی کے دل و نگاہ کو بدبودار بنا دیتا ہے۔ اور جو شخص کسی سے محض اُس کے ظاہری حُسن کی بنیاد پر محبت کا دعویٰ کرتا ہے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

ہدایت کا دروازہ

ایک امیر کے پاس بڑا ذہین،محنتی اور مُتّقی پرہیزگار غلام تھا۔اس غلام کا نام سنقر تھا۔وہ غلام جتنا اللّہ پر توکل کرنے والا تھا اس کا آقا اتنا ہی کمزور ایمان رکھتا تھا۔ایک صبح آقا نے غلام کو آواز دی کہ غُسل کے لیے جانا ہے ضروری سامان حمام میں پہنچا دو

"حکایات" میں شائع کیا گیا

اللہ تعالیٰ سے محبت

حضرت موسیٰ علیہ السلام ایک دن جنگل جا رہے تھے کہ اُنھوں نے ایک چرواہے کی آواز سنی.. وہ اونچی اونچی کہہ رہا تھا..
’اے میرے جان سے پیارے خدا.. تُو کہاں ہے..؟ میرے پاس آ.. میں تیرے سر میں کنگھی کروں ' جوئیں چنوں ' تیرا لباس میلا ہو گیا ہے تو دھوؤں ' تیرے موزے پھٹ گئے ہوں تو وہ بھی سیئوں ' تجھے تازہ تازہ دُودھ پلاؤں ' تو بیمار ہو جائے تو تیری تیمارداری کروں..

"حکایات" میں شائع کیا گیا

نقلی ہیرا

اللہ تعالٰی کا حکم ہے کہ ضرورت مندوں کی ضروریات کو پورا کیا جائے، ایسا کرنے سے معاشرے سے برائیاں ختم ہو جاتی ہیں

"حکایات" میں شائع کیا گیا

مور اور اس کے پر

ایک حکیم جنگل میں گھوم رہا تھا۔ سر سبز و شاداب جگہ میں اس نے ایک مور کو دیکھا۔ مور اپنے خوبصورت پروں کو اُکھیڑ رہا تھا۔ حکیم کو یہ ماجرا دیکھ کر بڑی حیرت ہوئی۔ وہ مور کے قریب گیا

"حکایات" میں شائع کیا گیا

موت کا وقت

انسان لاکھ تدبیر کرے تقدیر اسے وہیں لے جاتی ہے جہاں اس کا نصیب ہو اور وہ خود تقدیر کے عزائم پورا کرنے کے لیے اسباب فراہم کرتا ہے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

مکمل سبق

جھوٹ بولنے سے تو میں نے اٌسی دن توبہ کر لی تھی لیکن غصہ نہ کرو یہ مشکل کام تھابہت کوشش کیا کرتا تھا کہ غصہ نہ آئے لیکن غصہ آ جاتا تھا ۔۔ اب جب تک میں غصے پر قابو پانا سیکھ نہیں جاتا تو کیسے کہہ دیتا کہ سبق یاد ہو گیا

"حکایات" میں شائع کیا گیا

محبت اور کڑوی چیز

انسان کو ہر حال میں مالکِ حقیقی کی عطا کردہ نعمتوں کا شکر ادا کرنا چاہیۓ۔ معمولی معمولی تکلیفوں پر شور و غوغا اور لعن طعن نہیں کرنا چاہیۓے لگا۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

غلام کا بلند مرتبہ

کسی دنیادار نے حضرت لقمان سے پوچها:
"آپ فلاں خاندان کے غلام رہے ہیں تو پهر یہ مرتبہ یہ عزت اور ناموری،وہ کونسے عوامل تهے جن کی وجہ سے اپ کو یہ بلندمرتبہ ملا؟"

"حکایات" میں شائع کیا گیا

شیر پر سواری

اللہ تعالی نے مجھے یہ بلند مقام اپنی بیوی کی بدزبانی پر صبر کرنے کی وجہ سے عطا فرمایا ہے اگر میں اسکی ہرزہ سرائی برداشت نہ کرتا تو یہ شیر میرا مطیع کیسے ہوتا

"حکایات" میں شائع کیا گیا

شِخی خور کی مونچھیں

شیخی خور آدمی کو کہیں سے دنبے کی چکی کا ایک ٹکڑا مل گیا وہ روزانہ صبح اٹھتے ہی اپنی مونچھیں دنبے کی چکتی سے چکنی کر کے اکڑاتا اور امیروں اور دولت مندوں کی محفل میں جاکے بیٹھتا اور بڑے اکڑ کر بار بار کہتا آج تو بڑے مرغن کھانا کھائے ہیں

"حکایات" میں شائع کیا گیا

سحر عشق

انسان کو ہر دم اپنی حقیقت سے آگاہ رہنا چاہئے۔ ورنہ بعض لوگ اپنی حقیقت کو فراموش کر کے خدا بننے کو کوشش کرتے ہیں جس کا نتیجہ خسارے کے سواکچھ نہیں ہوتا۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا