بند کریں
ادب مضامین

مزید عنوان

اردو ادب میں نیا اضافہ

حکمت لقمان

لقمان نے مالک سے کہا اے آقا میں نے آج تک امانت میں خیانت نہیں کی ہمیشہ سچ بولاہے میں جانتا ہوں کہ اللہ بے ایمان شخص کو کبھی نہیں بخشتا میری آپ سے درخواست ہے کہ ہم سب غلاموں کا امتحان لیں وہ اس طرح کہ

"حکایات" میں شائع کیا گیا

ایک پیغام طوطے کے نام

ایران کا ایک سوداگر تجارت کے لئے ہندوستان گیا تو وہاں سے ایک خوبصورت، میٹھی آواز کا مالک اور دل پسند اداؤں کا مالک باتیں کرنے والا طوطا خرید لایا۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

چوروں کا گروہ

سلطان محمد غزنوی رات کو بھیس بدل کر سیر کیا کرتا تھا کہ رعایا کے نیک و بد کی خبر رکھے۔ ایک دن اسے پانچ چور ملے۔ سلطان نے کہا میں بھی تمہارا ہی ہم پیشہ بھائی ہوں۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

پوشیدہ راز

حضرت داؤد علیہ السلام کے زمانے میں ایک شریف النفس اور کمزور آدمی تھا۔ اللہ کے حضور یہ دعا کرتا رہتا تھا کہ مجھے غریب بے سہارا کو غیب سے روزی عطا فرما اور مجھے محبت و مشقت میں نہ ڈال

"حکایات" میں شائع کیا گیا

پوشیدہ حکمت

ایک دن چھری کانٹے کے ساتھ پھل کھاتے ہوئے بادشاہ سلامت کی انگلی زخمی ہو گئی۔ دلیر بادشاہ سلامت اپنی انگلی سے خون بہتا دیکھ کر پریشان ہو گیا۔ وزیر نے کہا: ”ظلِ الٰہی فکر کی کوئی بات نہیں اس میں بھی اللہ تعالٰی کی طرف سے کوئی حکمت پوشیدہ ہو گی“۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

ایاز کی فراست

کہتے ہیں ٗ آدمی کی خوبیاں ہی اکثر اوقات اس کی دشمن بن جاتی ہیں۔ ایاز کی ذہانت و عقلمندی،دیانت و امانت اور اپنے آقا کے ساتھ اس کی مکمل فرمانبرداری ایسی خوبیاں تھیں جنہوں نے تمام امیر وزیروں کو اس کا دشمن بنا دیا تھا۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

روحانی بیماری

حضرت شعیب علیہ السلام کے زمانے میں ایک آدمی اکثر یہ کہتا رہتا تھا کہ ’’مجھ سے بے شمار گناہ اور جرم سرزد ہوتے رہتے ہیں۔ اللہ کے کرم سے مجھے کچھ نہیں ہوتا‘‘۔ حضرت شعیب علیہ السلام نے جب اس کی یہ باتیں سنیں تو فرمانے لگے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

فنکار درزی

پورش نامی درزی بڑا فنکار ہے ،اس کے کاٹے کا منتر ہی نہیں ،ہاتھ کی صفائی میں ایسا استاد کہ کپڑا تو کپڑا آنکهوں کا کاجل تک چرالے اور چوری کا پتہ نہ لگنے دے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

جانوروں کی زبان سمجھنا

زمین پر گرا مرغا وه ٹکڑا اٹھا کر لے گیا۔کتے نے کہا،دوست تو تو دانہ دنکا کھا کر بھی اپنا پیٹ بھر لے گا۔اگر روٹی کا ٹکڑا مجھے دے دے تو میرا گذارا چل جاۓ گا۔مرغ نے کہا۔"میاں صبر کرو خدا تجھے بھی دے گا۔کل ہمارے مالک کا گھوڑا مرجاۓ گا۔تم پیٹ بھر کر کھائیو۔"

"حکایات" میں شائع کیا گیا

ﺍﮊﺩﮬﺎ

ایک سپیرا دن رات نت نئے اور زہریلے سانپوں کی تلاش میں جنگل، بیابان ، کوہ و صحرا میں مارا مارا پھرتا رہتا تھا

"حکایات" میں شائع کیا گیا

اللہ والوں کی عبادت

ایک ولی اللہ امامت کیلئے کھڑے ہوئے، چند ہم عصر ساتھی بھی ان کی اقتداء میں نماز ادا کرنے کیلئے کھڑے ھوگئے۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

عبرت حاصل کرنا

شیر، بھیڑیا اور لومڑی اکٹھے مل کر شکار کو نکلے ان کو شکار میں نیل گائے، جنگلی بکرا اور خرگوش ہاتھ آئے۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

خزانہ

ایک فقیر بہت مفلس و کنگال تھا.اس کی دعا رب تعالٰی سے یہی تھی کہ تو نےمجھے بغیر مشقت کے پیدا کیا ہے۔اسی طرح بغیر مشقت کے مجھے روزی بھی دے وہ مسلسل یہی مانگا کرتا تھا۔اللہ تعالٰی عزوجل نے اس کی دعا قبول فرمائی

"حکایات" میں شائع کیا گیا

دل کی صفائی

دل کی صفائی ہی کامیابی کی ضمانت ہے اِس لئے دل کو نقش و نگار سے سجانے کی جگہ اِس کی صفائی کر کے اسے مثلِ آئینہ بنانے پر دھیان دینا چاہیے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

مسلم حکمران کے عظیم الشان محل کا انجام

مسلم حکمران سلطان عبدالرحمان ثالث نے بیوی کی محبت میں ایک عالیشان محل ’’ مدینتہ الزاہرا‘‘ تعمیر کروایا جس کے انتظامات اور نگرانی کیلئے13570 ملازم اور 13382 غلام مامور تھے

"مضمون" میں شائع کیا گیا

نقاب پوش عاشق

ایک نقاب پوش بزرگ کسی خطہ عرب کے بادشاہ تھے پہلے بڑے شاعر اور عشق مجازی میں مبتلا تھے۔ حکومت اور ملک کے حریص، نازک طبع اور صاحب جمال تھے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

قاصد روم

حضرت عمر فاروق رضی الله عنہ کے دور خلافت میں قیصر روم نے اپنا سفیر مدینہ منورہ میں بھیجاقاصد نے وہاں پہنچ کر خلیفہِ وقت کے محل کا پوچھا کہ کہاں ہے تاکہ میں اپنا مال و اسباب وہاں پہنچا دوں۔

"حکایات" میں شائع کیا گیا

صبر و تحمل

حضرت موسیٰ علیہ السلام نبوت سے قبل حضرت شعیب علیہ السلام کے ہاں بکریاں چرایا کرتے تھے۔ ایک دن ایک بکری ریوڑ سے الگ ہو کر کہیں کھو گئی۔ حضرت موسیٰ علیہ السلام جنگل میں اسے آگے پیچھے تلاش کرتے کرتے بہت دُور نکل گئے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

قیاس کا ترازو

حضرت علی ؓ ایک دن بالا خانے (چھت) پر تشریف فرما تھے۔ نیچے سے ایک یہودی نے آپ کی طرف دیکھا تو کہنے لگا "کیا آپ کو اِس بات کا علم ہے کہ اللّٰہ حفاظت کا ذمہ دار ہے۔؟ اور کیا آپ کو حق تعالیٰ کی حفاظت پر اعتماد ہے

"حکایات" میں شائع کیا گیا

سیاہ سانپ

رسول اللہ ﷺ نے ایک بار وضو کرنے کے بعد موزہ پہننے کا قصد فرمایالیکن دیکھا کہ اچانک آپ ﷺ کا موزہ ایک عقب لے کر اڑ گیا

"حکایات" میں شائع کیا گیا