Baghaer Naqshay Kay Saray Makan Lagtay HaiN

بغیر نقشے کے سارے مکان لگتے ہیں

بغیر نقشے کے سارے مکان لگتے ہیں

یہ جتنے گھر ہیں قضا کی دکان لگتے ہیں

کبھی تو سچ کبھی بالکل گمان لگتے ہیں

نفیس لوگ ہیں جادو بیان لگتے ہیں

یہ ٹھیکیدار عمارت کے یہ زمیں والے

گرے جو گھر تو بہت بے زبان لگتے ہیں

میں ان میں آج بھی بچپن تلاش کرتا ہوں

میں خوش نہیں ہوں جو بچے جوان لگتے ہیں

وہ میرا بھائی نہیں پر وہ کوئی وار سہے

مری بھی پیٹھ پر نیلے نشان لگتے ہیں

قریب آئیں تو چھوٹا سا قد نکالتے ہیں

یہ لوگ دور سے کتنے مہان لگتے ہیں

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(519) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Baghaer Naqshay Kay Saray Makan Lagtay HaiN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.