Meray Ghar Ki EenTaiN OTha Lay Gaya Woh

مرے گھر کی اینٹیں چرا لے گیا وہ

مرے گھر کی اینٹیں چرا لے گیا وہ

نہیں جانتا ہے کہ کیا لے گیا وہ

اسے کیا ضرورت تھی وہ جانتا ہے

جو گھر میں پرایا خدا لے گیا وہ

سر راہ جس نے کیا قتل میرا

ستم ہے مرا خوں بہا لے گیا وہ

مرا روتا بچہ بہلتا تھا جس سے

وہ لکڑی کا ہاتھی اٹھا لے گیا وہ

سخاوت نے اس کو دھنی کر دیا ہے

فقیروں کی سچی دعا لے گیا وہ

اسے تو ضرورت تھی چنگاریوں کی

ہواؤں میں شعلے دبا لے گیا وہ

وہ کل آئے گا آگ اس میں لگانے

مری جھونپڑی کا پتہ لے گیا وہ

لبھانے کی اس میں ادا کب تھی پہلے

مری شاعری کی ادا لے گیا وہ

وہ بت ہم سے مل کر بنا سومناتی

کہ سونے کا پانی چڑھا لے گیا وہ

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(511) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Meray Ghar Ki EenTaiN OTha Lay Gaya Woh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.