Deedar Mein Ik Tarfah Deedar Nazar Aaya

دیدار میں اک طرفہ دیدار نظر آیا

دیدار میں اک طرفہ دیدار نظر آیا

ہر بار چھپا کوئی ہر بار نظر آیا

چھالوں کو بیاباں بھی گلزار نظر آیا

جب چھیڑ پر آمادہ ہر خار نظر آیا

صبح شب ہجراں کی وہ چاک گریبانی

اک عالم نیرنگی ہر تار نظر آیا

ہو صبر کہ بیتابی امید کہ مایوسی

نیرنگ محبت بھی بیکار نظر آیا

جب چشم سیہ تیری تھی چھائی ہوئی دل پر

اس ملک کا ہر خطہ تاتار نظر آیا

تو نے بھی تو دیکھی تھی وہ جاتی ہوئی دنیا

کیا آخری لمحوں میں بیمار نظر آیا

غش کھا کے گرے موسیٰ اللہ ری مایوسی

ہلکا سا وہ پردہ بھی دیوار نظر آیا

ذرہ ہو کہ قطرہ ہو خم خانہ ہستی میں

مخمور نظر آیا سرشار نظر آیا

کیا کچھ نہ ہوا غم سے کیا کچھ نہ کیا غم نے

اور یوں تو ہوا جو کچھ بے کار نظر آیا

اے عشق قسم تجھ کو معمورۂ عالم کی

کوئی غم فرقت میں غم خوار نظر آیا

شب کٹ گئی فرقت کی دیکھا نہ فراقؔ آخر

طول غم ہجراں بھی بے کار نظر آیا

فراق گورکھپوری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2560) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Firaq Gorakhpuri, Deedar Mein Ik Tarfah Deedar Nazar Aaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad Urdu Poetry. Also there are 69 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Firaq Gorakhpuri.