Baagh Ik Din Ka Hai So Raat Nahi Anay Ki

باغ اک دن کا ہے سو رات نہیں آنے کی

باغ اک دن کا ہے سو رات نہیں آنے کی

وہ پری پھر سے مرے ہات نہیں آنے کی

اب وہ لڑکی نہیں آنے کی مرے کالج میں

اب کے ملتان سے سوغات نہیں آنے کی

تم چلی جاؤ یہ پتھر نہیں پہلے جیسا

آنکھ سے جوئے مناجات نہیں آنے کی

اب جو یہ وصل ہے اس وصل کو بے کار سمجھ

ہم پہ رنگینیٔ حالات نہیں آنے کی

دیکھ لو کھول کے کھڑکی کہ ذرا دیر ہیں ہم

دوسری بار یہ بارات نہیں آنے کی

اب ترے بعد فقط آب ہی اترے گا یہاں

اب کے برسات میں برسات نہیں آنے کی

الیاس بابر اعوان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(670) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ilyas Babar Awan, Baagh Ik Din Ka Hai So Raat Nahi Anay Ki in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ilyas Babar Awan.