Intebah

انتباہ

عدو یہ بھول بیٹھا ہے

جو میرے خوں کا پیاسا ہے

یقینا بھول بیٹھا ہے

عطا کرتا ہے جو سانسیں وہ جینے اور مرنے کا تعین بھی تو کرتا ہے

عدو یہ بھول بیٹھا ہے

کہ اس کی وار کی ضربیں اسی کے جسم پر اک دن نمایاں ہو کے تڑپیں گی

سو میرے دکھ کے بدلے وہ یقینا سکھ گنوائے گا

گلی کوچوں میں پھر کر ظلم کا ماتم منائے گا

جو مجھ پر بار لادا تھا

اسے وہ خود اٹھائے گا

عدو اب حوصلہ رکھنا

تم اپنا دل بڑا رکھنا

تم اپنا دل بڑا رکھنا

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(350) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Intebah in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.