Najane Kon Se Lamhe Judai Ho Jaye

نجانے کون سے لمحے جدائی ہو جائے

نجانے کون سے لمحے جدائی ہو جائے

تمارا ہجر مسلسل کمائی ہو جائے

تماری جیت یقینی ہے میرے ہونے سے

اٹھے جو ہاتھ مرا جگ ہنسائی ہو جائے

میں رب سے بات کروں گا تمارے بارے میں

ذرا سا صبر فلک تک رسائی ہو جائے

اسی لیے تو ہمیشہ فلک پہ دستک دی

سیاہ زلف سے شاید رہائی ہو جائے

مجھے تو عشق کا مطلب یہی سمجھ آیا

دوئی کمال کو پہنچے اکائی ہو جائے

یہ نفرتوں کا نہیں وقت ہے محبت کا

کہ سانس چلتے ہوئے کب پرائی ہو جائے

مجھے تلاش ہے ماجد اسی قلندر کی

نگاہ جس کی پڑے اور صفائی ہو جائے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(414) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Najane Kon Se Lamhe Judai Ho Jaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.