Zameen Zada

زمین زادہ

مکیں فلک کے زمین زادے کی بات سن لے

خبر ہےمجھ کو تمارے آگے حباب جیسے وجود میرا

سوال اتنا سا ہے خدایا کہ مجھ کو حساس کیوں بنایا

سوال یہ ہےمنافقت سے بھری ہے مجلس

سوال یہ ہے کہ سکھ کی سانسیں نحیف جسموں سے کوچ کر کے فضا میں یونہی بھٹک رہی ہیں

سوال یہ ہے جہان تیرا ہوس کے آگے جھکا ہوا ہے

سوال یہ ہے کہ حق کی چیخیں نکل رہی ہیں

سوال یہ ہےکہ کُند ذہنوں کی بزم دانشوروں میں شامل ہوئی ہے جب سے

اجالے تیرہ شبی کا منظر دکھا رہے ہیں

سوال یہ ہے زمیں پہ آنے کا واقعہ بھی عجب معمہ بنا ہوا ہے

سوال یہ ہے زمیں کے اوپر گرا ہوا ہوں نجانے کب تک گرا رہوں گا

سوال یہ ہےضمیر میرا قلم کےقبضے میں آگیا ہے سو سچ اگلنا تو فطرتی ہے

سوال یہ ہے زمین زادے فلک کو آنکھیں دکھا رہے ہیں

صنم تراشی میں محو ہو کر خدا کوپتھر بنا رہے ہیں

یہ حشر سے قبل مان لیجے نئی قیامت اٹھا رہے ہیں

سوال یہ ہے ہر اک بشر کو پڑی ہے اپنی تو کیا قیامت کا سامنا ہے؟

زمین زادے کی باتیں سن کر اگر جو قدرت کو جوش آئے

تو درگزر کی روش خدایا نہ ترک کرنا

تری عطا ہے تری سخا ہے

کہ تونے خود ہی شعور بخشا ہوا ہے مجھ کو

بس ایک حسرت نے ڈیرہ ڈالا ہوا ہے دل میں

مرے سوالوں کا مختصر سا جواب دےدے

کٹھن مسافت فگار پاوْں لیے ہوئے ہوں

دہن ہے زخمی لبوں کو اپنے سیے ہوئے ہوں

اب اور مجھ میں نہیں ہےہمت وجود کب تک

بتا گھسیٹوں

سو جستجو کو تمام کر دے

مرا یہ چھوٹا سا کام کر دے۔۔مرا یہ چھوٹا سا کام کر دے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(377) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Zameen Zada in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.