Main Hijr Or Sakoot KO Baham Millaon Ga

میں ہجر اور سکوت کو باہم ملاوں گا

میں ہجر اور سکوت کو باہم ملاوں گا

پھر اس کے بعد وصل کا نکتہ اٹھاوں گا

کارِ ہوس نے عشق مرا کھوکھلا کیا

جتنا بھی ہو سکا اسے اتنا گھٹاوں گا

ان واعظانِ شہرکو معلوم بھی نہیں

میں بندگی کے باب میں کیا کر دکھاوں گا

جتنے مغالطے ہیں خرد کے نکال کر

حیرت سرائے عشق میں ہر دم نچاوں گا

جل جاوں گا میں آگ میں یا پاوں گا دوام

جوبھی بنے گا خاک کا میں تو بناوں گا

کوشش کروں گا نور سے ہو خاک مستفید

اک بار تیرے عرش سے میں سر لگاوں گا

یہ عشق کے مقام کی ادنی مثال ہے

دنیا کو اپنے ہاتھ پہ دنیا دکھاوں گا

ماجد درودِ پاک کی کثرت سے ایک دن

رستے پکاریں گے مجھے منزل میں پاوں گا

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(384) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Main Hijr Or Sakoot KO Baham Millaon Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.