Laja Laja Ke Sitaron Say Mang Bharti Hai

لجا لجا کے ستاروں سے مانگ بھرتی ہے

لجا لجا کے ستاروں سے مانگ بھرتی ہے

عروس شام یہ کس کے لیے سنورتی ہے

وہ اپنی شوخی رفتار ناز میں گم ہے

اسے خبر ہی کہاں کس پہ کیا گزرتی ہے

جواب اس کے سوالوں کا دے کوئی کب تک

یہ زندگی تو مسلسل سوال کرتی ہے

اس آرزو نے ہمیں بھی کیا اسیر اپنا

وہ آرزو جو سدا دل میں گھٹ کے مرتی ہے

اب آ گئے ہو تو ٹھہرو خرابۂ دل میں

یہ وہ جگہ ہے جہاں زندگی سنورتی ہے

یہ چھٹنے والے ہیں بادل جو کالے کالے ہیں

اسی فضا میں وہ روشن دھنک نکھرتی ہے

کوئی پڑاؤ نہیں اس سفر میں اے مخمورؔ

جو چل پڑے تو ہوا پھر کہاں ٹھہرتی ہے

مخمور سعیدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(643) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Makhmoor Saeedi, Laja Laja Ke Sitaron Say Mang Bharti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Makhmoor Saeedi.