Bass Ana Ko Bahal Rakhna Hai

بس انا کو بحال رکھنا ہے

اپنے اپنے ہی خول میں ہم تم

کیسے خود کو چھپا کے بیٹھ گئے

ہم کو اپنی انا کا پاس رہا

اور سارے خیال بھول گئے

خواب جو ہم نے ساتھ دیکھے تھے

سارے وہ کیسے تار تار ہوئے

سارے وعدے وفا کے ٹوٹ گئے

اور ارمان سب ہی خاک ہوئے

دیکھنے میں تو میں شگفتہ ہوں

تم بھی شاداب سب کو لگتے ہو

اک حقیقت مگر میں جانتی ہوں

یہ بظاہر نظر جو آتا ہے

آئنہ وہ ہمارے دل کا نہیں

ہم تو اک دوسرے کی فرقت میں

زندہ رہنا محال کہتے تھے

عکس وہ بھی ہماری ذات کا تھا

عکس یہ بھی ہماری ذات کا ہے

ہے اداسی تو چاروں‌ سمت مگر

زیب تن کر کے خول خوشیوں کا

ہم کو اپنا بھرم بھی رکھنا ہے

چاہے غم کے پہاڑ جتنے گریں

بس انا کو بحال رکھنا ہے

سبیلہ انعام صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(781) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabeela Inam Siddiqui, Bass Ana Ko Bahal Rakhna Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabeela Inam Siddiqui.