Wo Alam Tishnagi Ka Hai Safar Asaan Nahi Lagta

وہ عالم تشنگی کا ہے سفر آساں نہیں لگتا

وہ عالم تشنگی کا ہے سفر آساں نہیں لگتا

بظاہر تو مجھے بارش کا بھی امکاں نہیں لگتا

یہ دل جاگیر ہے جس کی اسی کے نام کر دی ہے

جو میرے دل کے آنگن میں مجھے مہماں نہیں لگتا

شعور و آگہی کیسی کوئی وحشی کوئی سرکش

یہ کیسا دیش ہے جس میں کوئی انساں نہیں لگتا

نئی قدریں نئی تہذیب کا آغاز ہوتا ہے

گلستان ادب ہرگز کبھی ویراں نہیں لگتا

نہ ہو محفوظ مال و زر نہ عزت آبرو ہی جب

تو پھر زندہ کسی کا بھی مجھے ایماں نہیں لگتا

کہاں کا فخر کیسا ناز من آنم کہ من دانم

مگر جو رب سے پایا ہے مجھے ارزاں نہیں لگتا

خدا رکھے سبیلہؔ ہر گھڑی ماں باپ کا سایہ

دعا سے جن کی طوفاں بھی مجھے طوفاں نہیں لگتا

سبیلہ انعام صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(420) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabeela Inam Siddiqui, Wo Alam Tishnagi Ka Hai Safar Asaan Nahi Lagta in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabeela Inam Siddiqui.