Dil Ki Raftar Se Kiya Bandhain Irada Apna

دل کی رفتار سے کیا باندھیں ارادہ اپنا

دل کی رفتار سے کیا باندھیں ارادہ اپنا

عمر تھوڑی ہے مگر عشق زیادہ اپنا

تجھ کو دیکھا ہے تو آنکھوں میں سمٹ آیا ہے

ورنہ یہ دل ہے سمندر سے کشادہ اپنا

ہم نے رشتوں کے وہ ناسُور نبھائے ہیں کہ بس

اب جو دشمن ہو وہ لگتا ہے زیادہ اپنا

تُو تو پھر جانِ زمانہ ہے ترا ذکر ہی کیا

یاد رہتا نہیں یاروں کو بھی وعدہ اپنا

ہم نے کر لی ہے لکیروں سے بغاوت ورنہ

ہر مسافر کو میسر نہیں جادہ اپنا

عشق بے مہر و ملاقات کہاں کھُلتا ہے

دل لگایا ہے تو رکھ در بھی کشادہ اپنا

جانے کس کوہِ جنوں خیز کا پتھر ہے سعیدؔ

ضد پہ آ جائے تو بدلے نہ ارادہ اپنا

سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(366) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Khan, Dil Ki Raftar Se Kiya Bandhain Irada Apna in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Khan.