Zia Mazkoor Poetry, Zia Mazkoor Shayari

ضیا مذکور - Zia Mazkoor

بہاولپور

Poetry of Zia Mazkoor, Urdu Shayari of Zia Mazkoor

ضیا مذکور کی شاعری

وقت ہی کم تھا فیصلے کے لئے

Mere Kamray Main Ik Aisi Khirki Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

فون تو دور وہاں خط بھی نہیں پہنچیں گے

Phone To Daur Wahan Khat Bhi Nahi Pohnchain Gay

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

میرے کمرے میں اک ایسی کھڑکی ہے

Mare Kamray Main Ik Aisi Khirki Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

بول پڑتے ہیں ہم جو آگے سے

Bol Parte Hain Hum Jo Agay Say

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

بے سبب اس کے نام کی میں نے

Be Sabab Is Ke Naam Ki Main Nay

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

تم نے بھی ان سے ہی ملنا ہوتا ہے

Tum Ne Bhi In Say Hi Milna Hota Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

ایسے اس ہاتھ سے گرے ہم لوگ

Aisay Is Haath Se Giray Hum Log

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

اسی ندامت سے اس کے کندھے جھکے ہوئے ہیں

Isi Nedamat Se Is Ke Kandhay Jhuke Howay Hain

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

کوئی بھی رستہ بہت سوچ کر چنوں گا میں

Koi Bhi Rasta Bohat Soch Kar Chnon Ga Main

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

اسی ندامت سے اس کے کندھے جھکے ہوئے ہیں

Usi Nidamat Se Uske Kandhe Jhuke Hoe Hain

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

یوں بھی اس رات مرے پاس سمے تھوڑا تھا

Yun Bhi Us Rat Mere Pas Samy Thoda Tha

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

تم نے بھی ان ہی سے ملنا ہوتا ہے

Tumne Bhi Un Se Hi Milna Hota Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

مختلف داستاں سناتا ہے

Mukhtalif Dastan Sunata Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

میرے کمرے میں اک ایسی کھڑکی ہے

Mere Kamre Mein Aisi Khidki Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

کن بہاروں سے سامنا ہوا ہے

Kin Baharon Se Samna Hova Hai

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

اک نظر دیکھتے تو جاؤ مجھے

Ek Nazar Dekhte To Jao Mujhe

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

فون تو دور ویاں خط بھی نہیں پہنچیں گے

Fone To Dor Waha Khat Bhi Nahi Pohanchen Ge

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

اسی ندامت سے اُس کے کندھے جھکے ہوئے ہیں

Usi Nidamat Se Uske Kandhe Jhuke Hoe Hain

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

بول پڑتے ہیں ہم جو آگے سے

Bol Padte Hain Hum Jo Aage Se

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

بہت ہی بے وقوفی کر رہے ہیں

Bahut Hi Bewaqoof Kar Rahe Hain

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

ایسے اُس ہاتھ سے گرے ہم لوگ

Aise Us Hath Se Gide Hum Log

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

اگر ہم لوگ نقشہ دیکھ لیتے

Agar Hum Log Naqsha Dekh Lete

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

اب یہ اک آرٹ گیلیری ہے، جہاں

Ab Ye Ek Art Gallery Hai Jahan

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

آپ تو ایسے بات کرتے ہیں

Aap To Aise Baat Karte Hain

(Zia Mazkoor) ضیا مذکور

Urdu Poetry & Shayari of Zia Mazkoor. Read Nazams, Ghazals, Sad Poetry, Social Poetry of Zia Mazkoor, Nazams, Ghazals, Sad Poetry, Social Poetry and much more. There are total 24 Urdu Poetry collection of Zia Mazkoor published online.