OjRay Nagar MeiN Sham Kabhi Kar Lia KareN

اجڑے نگر میں شام کبھی کر لیا کریں

اجڑے نگر میں شام کبھی کر لیا کریں

مجھ سے دعا سلام کبھی کر لیا کریں

جنگل کے پھول ہی سہی لیکن ہیں کام کے

ساتھ ان کے بھی قیام کبھی کر لیا کریں

ہر راہ صاف سیدھی نہیں پر خطر بھی ہے

سورج چھپے تو شام کبھی کر لیا کریں

موسم ہے خوش گوار تو شاخیں بھی سر پہ ہیں

ان کا بھی احترام کبھی کر لیا کریں

کٹتا ہے وقت کیسے کسی کو گرایا جائے

کچھ کام کا بھی کام کبھی کر لیا کریں

شرکت تمام دعوتوں میں لازمی نہیں

لیکن کہیں تو نام کبھی کر لیا کریں

یہ سچ ہے آگے پیچھے شفقؔ دوست ہی تو ہیں

تلوار بے نیام کبھی کر لیا کریں

فاروق شفق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(254) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farooq Shafaq, OjRay Nagar MeiN Sham Kabhi Kar Lia KareN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farooq Shafaq.