Tairay Madhur Geeton Kay Saharay

تیرے مدھر گیتوں کے سہارے

تیرے مدھر گیتوں کے سہارے

بیتے ہیں دن رین ہمارے

تیری اگر آواز نہ ہوتی

بجھ جاتی جیون کی جوتی

تیرے سچے سر ہیں ایسے

جیسے سورج چاند ستارے

تیرے مدھر گیتوں کے سہارے

بیتے ہیں دن رین ہمارے

کیا کیا تو نے گیت ہیں گائے

سر جب لاگے من جھک جائے

تجھ کو سن کر جی اٹھتے ہیں

ہم جیسے دکھ درد کے مارے

تیرے مدھر گیتوں کے سہارے

بیتے ہیں دن رین ہمارے

میراؔ تجھ میں آن بسی ہے

انگ وہی ہے رنگ وہی ہے

جگ میں تیرے داس ہیں اتنے

جتنے ہیں آکاش پہ تارے

تیرے مدھر گیتوں کے سہارے

بیتے ہیں دن رین ہمارے

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1755) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Tairay Madhur Geeton Kay Saharay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.