Dil E Nadan Yaqeen Kar Ley Mohabbat Ab Nahi Ho Gi

دلِ ناداں یقیں کر لے محبت اب نہیں ہو گی

دلِ ناداں یقیں کر لے محبت اب نہیں ہو گی

قیامت آ چکی ہم پر قیامت اب نہیں ہو گی

جسے اپنا بنایا تھا جو رگ رگ میں سمایا تھا

بہت بےدرد نکلا وہ سو چاہت اب نہیں ہوگی

مرا بے سود ہے جینا جہانِ درد میں تنہا

مجھے سانسوں کی اے ہمدم ضرورت اب نہیں ہو گی

مجازی عشق میں کھو کر حقیقت بھول بیٹھا تھا

خدایا در گزر کرنا شکایت اب نہیں ہو گی

مذاہب کے تصادم نے خدا کو تقسیم کر ڈالا

کہیں مندر کہیں گرجا عبادت اب نہیں ہوگی

بیاں ایسے نہ کر ماجد زمانے کی حقیقت کو

وگرنہ جان کی تجھ سے حفاظت اب نہیں ہوگی

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(512) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Dil E Nadan Yaqeen Kar Ley Mohabbat Ab Nahi Ho Gi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.