Kuch Din Tra Khayaal Tri Arzoo Rahi

کچھ دن ترا خیال تری آرزو رہی

کچھ دن ترا خیال تری آرزو رہی

پھر ساری عمر اپنی ہمیں جستجو رہی

کیا کیا نہ خواب جاگتی آنکھوں میں تھے مگر

اے دل کی لہر رات کہاں جانے تو رہی

جاؤ پھر ان کو جا کے سمندر میں پھینک دو

اب سچے موتیوں کی کہاں آبرو رہی

مڑ مڑ کے بار بار پکارا اسے مگر

آواز بازگشت ہی بس چار سو رہی

ہلکے سے اک سکوت کے پردے کے باوجود

اس کم سخن سے رات بڑی گفتگو رہی

منہ موڑ کے وہ ہم سے چلا تو گیا مگر

اس کو بھی عمر بھر خلش لکھنؤ رہی

والیؔ! تمہیں نواز رہا ہے وہ ہر طرح

تم کو بھی اس کی فکر ولیکن کبھو رہی

والی آسی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(444) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of WALI AASI, Kuch Din Tra Khayaal Tri Arzoo Rahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of WALI AASI.