Main Ne Uss Se Hath Milaya Tha Or Bas

میں نے اسی سے ہاتھ ملایا تھا اور بس

میں نے اسی سے ہاتھ ملایا تھا اور بس

وہ شخص جو ازل سے پرایا تھا اور بس

لمبا سفر تھا آبلہ پائی تھی دھوپ تھی

میں تھا تمہاری یاد کا سایہ تھا اور بس

حد نگاہ چار سو کرنوں کا رقص تھا

پہلو میں چاند جھیل کے آیا تھا اور بس

اک بھیڑیا تھا دوستی کی کھال میں چھپا

اس نے مرے وجود کو کھایا تھا اور بس

پھر یوں ہوا ہوائیں تھیں رقصاں تمام رات

اک طاقچے میں دیپ جلایا تھا اور بس

دونوں طرف کی رنجشیں اشکوں میں بہہ گئیں

اک شخص میرے خواب میں آیا تھا اور بس

اس کارزار زیست میں ہم نے تمام عمر

ارشدؔ کسی کا عشق کمایا تھا اور بس

ارشد محمود ارشد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(514) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Arshad Mahmood Arshad, Main Ne Uss Se Hath Milaya Tha Or Bas in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 13 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Arshad Mahmood Arshad.