Dil Veerani Mein Kuch Aaisa Mast Hua

دل ویرانی میں کچھ ایسا مست ہوا

دل ویرانی میں کچھ ایسا مست ہوا

میں نے جس جانب بھی دیکھا دشت ہوا

غم دِل کو ہولے سے تھپکی دیتا ہے

بچے کے گالوں پر ماں کا دست ہوا

پہلے دل کی گلیوں میں ہنگام ہوا

پھر ہر موڑ پہ ویرانی کا گشت ہوا

خواب ادھورے تھے، ہم خود تو پورے تھے

ہم سے کیوں نہیں اپنے غم پر ضبط ہوا

غم کا وہ اک لمحہ میرے اندر ہی

ہست ہوا، پھر بود ہوا، پھر ہست ہوا

نفسانفسی کا عالم تھا اور ہم تھے

تیرے غم کا تیر بھی آ پیوست ہوا

ماضی سب کا ہوتا ہے پر یار، عماد

تجھ پہ کیا بیتی جو اتنا سخت ہوا

عماد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(545) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Emad Ahmad, Dil Veerani Mein Kuch Aaisa Mast Hua in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Emad Ahmad.