Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain, Urdu Ghazal By Manzoor Hashmi

Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain is a famous Urdu Ghazal written by a famous poet, Manzoor Hashmi. Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain comes under the Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope category of Urdu Ghazal. You can read Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain on this page of UrduPoint.

نئی زمیں نہ کوئی آسمان مانگتے ہیں

منظور ہاشمی

نئی زمیں نہ کوئی آسمان مانگتے ہیں

بس ایک گوشۂ امن و امان مانگتے ہیں

کچھ اب کے دھوپ کا ایسا مزاج بگڑا ہے

درخت بھی تو یہاں سائبان مانگتے ہیں

ہمیں بھی آپ سے اک بات عرض کرنا ہے

پر اپنی جان کی پہلے امان مانگتے ہیں

قبول کیسے کروں ان کا فیصلہ کہ یہ لوگ

مرے خلاف ہی میرا بیان مانگتے ہیں

ہدف بھی مجھ کو بنانا ہے اور میرے حریف

مجھی سے تیر مجھی سے کمان مانگتے ہیں

نئی فضا کے پرندے ہیں کتنے متوالے

کہ بال و پر سے بھی پہلے اڑان مانگتے ہیں

منظور ہاشمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2795) ووٹ وصول ہوئے

You can read Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain written by Manzoor Hashmi at UrduPoint. Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain is one of the masterpieces written by Manzoor Hashmi. You can also find the complete poetry collection of Manzoor Hashmi by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Manzoor Hashmi' above.

Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain is a widely read Urdu Ghazal. If you like Nayi Zameen Na Koi Asmaan Mangte Hhain, you will also like to read other famous Urdu Ghazal.

You can also read Love Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.