Ban Kar Ju Koi Samne Ata Hai Aaina

بن کر جو کوئی سامنے آتا ہے آئنہ

بن کر جو کوئی سامنے آتا ہے آئنہ

خیمے میں دل کے آ کے لگاتا ہے آئنہ

وہ کون ہے یہ مجھ سے کبھی پوچھتا نہیں

میں کون ہوں یہ مجھ کو بتاتا ہے آئینہ

اس عکس کے برعکس کوئی عکس ہے کہیں

کیوں عکس کو برعکس دکھاتا ہے آئنہ

خود کو سجائے جاتے ہیں وہ آئنے کو دیکھ

جلووں سے ان کے خود کو سجاتا ہے آئنہ

خود آئنے پہ ان کی ٹھہرتی نہیں نظر

کیسے پھر ان سے آنکھ ملاتا ہے آئنہ

یہ میرا عکس ہے تو مگر اجنبی سا ہے

کیوں کر مجھے مجھی سی چھپاتا ہے آئنہ

کب دل کے آئنے میں کھلا کرتے ہیں گلاب

کب آئنے میں پھول کھلاتا ہے آئنہ

آویزہ دیکھتے ہیں وہ جھک کر قریب سے

یا ان کو کوئی راز بتاتا ہے آئنہ

جب میرا عکس مجھ سے مماثل نہیں رہا

کیوں میرا عکس مجھ کو دکھاتا ہے آئنہ

اس آئنے میں عکس کسی کا ہے رات دن

احمدؔ یہ عشق دل کو بناتا ہے آئنہ

محمد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(448) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mohammad Ahmad, Ban Kar Ju Koi Samne Ata Hai Aaina in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mohammad Ahmad.