Gulistan E Ishq Se Uth-ti Hai Aaj Bhi Khushbu Hum Se

گلستان عشق سے اٹھتی ہے آج بھی خوشبو ہم سے

گلستان عشق سے اٹھتی ہے آج بھی خوشبو ہم سے

آبیاری ہوتی ہے کلیوں کی پھول کرتے ہیں وضو ہم سے

تم زخموں سے چُور دل لے کر ان کے در پہ کیوں گئے

دل فگار کی آبیاری کیلئے مانگ لیتے لہُو ہم سے

میرے ہجر کے غم میں تری آنکھیں بھی نم ہوئیں

یہ بتا کہ میری یاد کے وقت کیوں نہ ملی تُو ہم سے

کلی کا دل تو شبنم سحر نے کیا تھا گھائل

تم چمن کے پھولوں سے کہو کہ نہ موڑیں منہ ہم سے

یہ ماتم بنا رکھا ہے یہاں سارے اہل گلشن نے

آہ میرے گلشن کے پھولوں نے سیکھی ہے وفا کی خو ہم سے

ہم بھی آج یوں ہی غمگین ہو کر لوٹ آئے ہیں

ترے چمن میں کسی نے بھی نہ کی ہے گفتگو ہم سے

میرا غم سے نڈھال ہونا نہ ترا ظلم نہ تری ستم گری

مجھے تو بس مار گئی تر ی حسین آنکھوں کی جادو گری

مرجھائے ہوئے پھول کی طرح گزری ہے زندگی مری

کوئی چوم بھی نہ سکا کوئی توڑ بھی نہ سکا

اس کے تصور کو سجدے کر کے اس کی تصویر بنائی ہم نے

و ہ تو بھول گئے مجھے مگر میں ا ن کو بھلا بھی نہ سکا

برسوں سے رواں ہے لہُو میرے زخم دل سے

جو خون دل کا جام بنا یا تھا وہ تجھے پلا بھی نہ سکا

ہم ہیں اہل غم ہم ان کے عادی وہ ہمارے عادی

ترا غم فراق دل تو کیا میری روح میں سما بھی نہ سکا

اس چراغ میں میرا خون بھی جلا تری یاد بھی جلی

میں تو بیدار شب خیز ہوں ، رات بھر تجھے سلا بھی نہ سکا

کون کسی کے بچھڑنے کے غم میں خود مر جاتا ہے

تجھے مرا کیا غم ہے تُو مری لحد پہ دو اشک بہا بھی نہ سکا

ہم تو مر کر بھی تری ہی امید پہ زندہ رہے

کوئی ہمیں چھوڑ بھی نہ سکا کوئی ہمیں جلا بھی نہ سکا!

سردار زبیر احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1160) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sardar Zubair Ahmed, Gulistan E Ishq Se Uth-ti Hai Aaj Bhi Khushbu Hum Se in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Islamic Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Islamic poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sardar Zubair Ahmed.