Jahan Tujhe Ehsaas Baraan Hoo Yeh Wo Shajar Nahi

جہاں تجھے احساس باراں ہو یہ وہ شجر نہیں

جہاں تجھے احساس باراں ہو یہ وہ شجر نہیں

میری آنکھوں میں برسات ،اور تری آنکھوں میں ابر نہیں

تری جوانی میں صرف شعلہ ہے تجھ میں مادہٴ صبر نہیں

ترا یہ سلوک ترے قانون میں انصاف ٹھہرا مگر جبرنہیں

وہ بہار کبھی بہار نہیں ہوتی جس کا خزاں نہ ہو

کیا مزہ اس عشق کی سوداگری میں جہاں دل کا زیاں نہ ہو

گلاب بھی صرف اپنے کانٹوں پہ خوش رہتے ہیں

ایسے ہی ہم بھی بحر غم میں ڈوب کر خوش رہتے ہیں

ستارے، کہکشائیں سب محفل قمر میں خوش رہتے ہیں

جس سینے میں آباد ہوں شوق غم وہی دہر میں خوش رہتے ہیں

ترے چمن کی کوئل کے گیتوں کا ساز ہی کچھ اور ہے

کبھی ساقی کا بدل جانا ،کبھی جام کے بدلنے کا راز ہی کچھ اور ہے

تجھ سے عشق کرنے والے بہت ہیں

تری اداوٴں پہ مرنے والے بہت ہیں

ہم نگاہ اٹھا کر تجھے دیکھیں گے بھی نہیں

میری نظر میں تجھ جیسے گرنے والے بہت ہیں

اے گل معصوم سر ساحل سے ہی لطف نظارہ کر

تہہٴ جام دل نہ چھیڑ اس سے طوفاں ا بھرنے والے بہت ہیں !

سردار زبیر احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(235) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sardar Zubair Ahmed, Jahan Tujhe Ehsaas Baraan Hoo Yeh Wo Shajar Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sardar Zubair Ahmed.