Sheher Ki Viraan Sarak Per Jashn Ghaam Karte Hue

شہر کی ویراں سڑک پر جشن غم کرتے ہوئے

شہر کی ویراں سڑک پر جشن غم کرتے ہوئے

جا رہا ہوں خشکئ مژگاں کو نم کرتے ہوئے

زندگی تنہا سفر پر گامزن ہوتی ہوئی

اور ہم یادوں کو پچھلی ہم قدم کرتے ہوئے

بول اٹھتے ہیں کئی برسوں پرانے زخم بھی

دل ہو جب مصروف اپنی چپ رقم کرتے ہوئے

اس کا بھی کہنا یہی برباد ہو جاؤ گے تم

اور ہم بھی ٹھیک ویسا دم بہ دم کرتے ہوئے

مہربانی لازمی ہے خود بھی اپنی ذات پر

حرج کیسا آپ اپنے پر کرم کرتے ہوئے

دنگ رہ جاؤ گے تم اپنے کرم فرما کو جب

دیکھ لو گے اک دفعہ گھر میں ستم کرتے ہوئے

عین ممکن ہے تڑپ اٹھنا ہمارا ایک دن

یاد میں اللہ کی یاد صنم کرتے ہوئے

جانے کس دم لے اڑے یہ موت کا جھونکا امرؔ

ایک دن خاک بدن کو خود میں ضم کرتے ہوئے

امردیپ سنگھ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(492) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Amardeep Singh, Sheher Ki Viraan Sarak Per Jashn Ghaam Karte Hue in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Amardeep Singh.